|

وقتِ اشاعت :   March 3 – 2016

کوئٹہ: چیف سیکریٹری بلوچستان سیف اللہ چٹھہ کی زیرصدارت سیکریٹریز کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں پی ایس ڈی پی 2015-16ء، مختلف محکموں میں بھرتیوں کے شفاف عمل، گوادر شہر کو صاف پانی کی فراہمی سمیت دیگر امور کا جائزہ لیا گیا۔ اجلاس میں سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو قمرمسعود، ایڈیشنل چیف سیکریٹری (ترقیات) نصیب اللہ بازئی، سمیت تمام صوبائی سیکریٹریز موجود تھے۔ ایڈیشنل چیف سیکریٹری نے اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ مالی سال 2015-16ء کے لئے ترقیاتی بجٹ کا حجم 51ارب روپے ہے جس میں جاری ترقیاتی اسکیمات کے لئے 19.5ارب اور 1310نئی اسکیمات کے لئے 31.5ارب روپے رکھے گئے ہیں اور ان میں سے جاری اسکیموں کے لئے 17.5ارب روپے جبکہ نئی اسکیموں کے لئے 24ارب روپے جاری کئے جاچکے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 1310نئی اسکیمات میں سے 1202کلیئر ہوئے ہیں جبکہ 108اسکیمز پینڈنگ میں ہیں اور ان میں محکمہ توانائی کے 39، تعلیم کے 17، زراعت کے 6، صحت کے 8وغیرہ شامل ہیں۔ چیف سیکریٹری نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ترقیاتی اسکیموں کی بروقت تکمیل کو یقینی بنایا جائے تاکہ وقت اور پیسے کا ضیاع نہ ہو اور ساتھ ساتھ کام اور معیار کی بھی نگرانی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ جن محکموں کی اسکیمات پینڈنگ میں ہیں ان پر جلد از جلد مسئلہ حل کرکے کام شروع کریں تاکہ پچھلے سال کی طرح بجٹ کا ضیاع نہ ہو۔ چیف سیکریٹری نے کہا کہ مختلف محکموں میں بھرتیوں کے عمل کے طریقہ کار کو شفاف بنایا جائے تاکہ اہل افراد کی حق تلفی نہ ہوسکے کیونکہ لوگوں کی امیدیں صوبائی حکومت سے وابستہ ہیں اور اس میں کسی قسم کی سفارش اور اقرباء پروری کو خاطر میں نہ لایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ جن محکموں کے انٹرویو مکمل ہوئے ہیں وہ فوری طور پر تعیناتیوں کے احکامات جاری کریں اور جن محکموں کے ٹیسٹ ہوئے وہ انٹرویو کے عمل کو تیز کرکے احکامات جاری کریں تاکہ بیروزگاری کی شرح میں کمی آسکے۔ چیف سیکریٹری نے کہا کہ تعلیمی اداروں میں واچ ٹاورز کے تعمیر کا کام جلد از جلد مکمل کیا جائے تاکہ وقت پر یونیورسٹیوں میں کلاسز کا اجراء کیا جاسکے۔ اس موقع پر اجلاس کو بتایا گیا کہ بیوٹمز، وویمن یونیورسٹی اور بولان میڈیکل کالج میں تعمیر کا کام تقریباً مکمل ہوگیا ہے۔ چیف سیکریٹری نے سیکریٹر ی تعلیم کو ہدایت کی کہ ان اداروں کا دورہ کریں اور کام کی تعمیر کو جلد مکمل کروایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ گوادر شہر کو صاف پانی کی فراہمی کے لئے اقدامات اٹھائے گئے ہیں اور جلد ہی اس مسئلے پر قابو پالیا جائے گا۔ چیف سیکریٹری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ وزیراعظم پاکستان نے کوئٹہ شہر کی خوبصورتی کے لئے پانچ ارب روپے کے پیکج کا اعلان کیا تھا اور اس کے لئے جلد ازجلد میگاپروجیکٹس کے لئے پی سی ون تیار کرکے وفاقی حکومت کو بھیج دیں تاکہ وفاق پروجیکٹس کے لئے فنڈز جاری کرے۔ اس موقع پر اجلاس کو بتایا گیا کہ کوئٹہ پیکج میں پارکنگ پلازہ، فلائی اوور اور انڈر پاسز وغیرہ شامل ہیں۔ چیف سیکریٹری نے کہا کہ کوئٹہ شہر کے روایتی حسن کو جلد بحال کیا جائے گا علاوہ ازیں چیف سیکریٹری کی زیرصدارت پولیو مہم کے حوالے سے اجلاس منعقد ہوا جس میں صوبائی کوآرڈینیٹر سیف الرحمن، کمشنر کوئٹہ ڈویژن قمبر دشتی اور دیگر حکام موجود تھے۔ چیف سیکریٹری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صوبائی حکومت نے صوبے سے پولیو کے خاتمے کے لئے ہنگامی طور پر اقدامات اٹھائے ہیں اور اس موذی مرض کو ہرصورت ختم کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ پولیو کے خاتمے کے لئے ہرمکتبہ فکر کے لوگوں کو کردار ادا کرنا ہوگا تب اس موذی مرض کو شکست دی جاسکتی ہے۔