|

وقتِ اشاعت :   January 2 – 2017

کوئٹہ : پاکستان پیپلزپارٹی کے صوبائی صدر میر حاجی علی مدد جتک نے کہاہے کہ پشتون بلوچ کی بات کرنے والے پاکستان کی بات کرے ،جعلی مینڈیٹ رکھنے والے خوردبرد میں ملوث ہیں ،اگر صوبے میں ترقیاتی کام ہوئے ہیں توہمیں بتایاجائے ،عوامی سردار عوام کیساتھ جبکہ خزانہ لوٹنے والے دوسرے ملکوں میں بیٹھ کر کھا رہے ہیں ،سی پیک منصوبہ پاکستان پیپلزپارٹی کامنصوبہ ہے اس کے خلاف سازشیں کرنیوالوں کو ہمیں بے نقاب کرنا ہوگا ،ان خیالات کااظہار انہوں نے کوئٹہ میں اپنی رہائش گاہ پر جمعیت علماء اسلام اور بلوچستان نیشنل پارٹی سمیت دیگر سے حمیداللہ مینگل ،ملک علی احمد ،عثمان مینگل ،نور احمد دہوار ،برکت مینگل ،شاہجہان کاکڑودیگر کی ساتھیوں سمیت پیپلزپارٹی میں شمولیت کے موقع پر منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔جلسہ عام سے پیپلزپارٹی کے مرکزی رہنماء سابق وفاقی وزیر سردارعمر گورگیج ، پی پی پی کے صوبائی جنرل سیکرٹری سید اقبال شاہ،سابق صوبائی وزیر محمدیونس ملازئی ،حاجی اشرف کاکڑ،شہزادہ کاکڑ،ثناء جتک ،درمحمدہزارہ ،ملک حمید کاکڑ ودیگر نے بھی خطاب کیا۔میر حاجی علی مدد جتک کاکہناتھاکہ بلوچستان میں سرداری ،نوابی ،مذہت اورقوم پرستی کے نام پر کامیاب ہونیوالے عوام کو بھول چکے ہیں بلکہ وہ تو اپنے ووٹرز کو پہنچاننے سے بھی انکاری ہے ،پاکستان پیپلزپارٹی نے ہمیشہ سے ہی ملک اور بلوچستان میں غریب اور پسے ہوئے طبقے کی بے لوث خدمت کی ہے ،بلوچ پشتون کی بات کرنیوالے پاکستان کی بات کرے ،لسانی بنیادوں پر عوام میں نفرتیں پھیلاناملک وقوم کی خدمت نہیں ہے ،انہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت میں شامل جماعتوں کو عوام کی حقیقی مینڈیٹ حاصل نہیں بلکہ جعلی مینڈیٹ کے ذریعے آئے اور مسلط ہوئے اسی لئے انہیں عوام کو درپیش مشکلات سے کوئی سروکار نہیں بلکہ و ہ کرپشن اور کمیشن میں لگے ہوئے ہیں جس کا واضح ثبوت بلوچستان میگا کرپشن کیس ہے ،انہوں نے کہاکہ ہم سب کو موجودہ حالات میں ملک دشمنوں پر نظر رکھنا ہوگی ،جب تک بلوچستان پرامن صوبہ نہیں بنے گا اس وقت تک یہاں معاشی اور دیگر بنیادوں پر ترقی ممکن نہ ہوگی ،انہوں نے کہاکہ عوامی سردار عوام کیساتھ موجود ہیں جبکہ خزانہ لوٹنے والے سردار دوسرے ممالک میں بیٹھ کر کھا رہے ہیں ،انہوں نے کہاکہ نواب اور سردار سی پیک کو اس لئے کامیاب نہیں دیکھنا چاہتے کیونکہ انہیں ڈر ہے کہ معاشی خوشحالی کے بعد عوام میں شعور آئیگا ،انہوں نے کہاکہ سابقہ ادوار میں سریاب میں پیپلزپارٹی کا جھنڈا لہرانا ممکن نہ تھا مگر اب سریاب پاکستان پیپلزپارٹی کا گڑھ بن چکاہے ،انہوں نے کہاکہ گزشتہ چار سالوں کے دوران صوبے میں کسی قسم کے ترقیاتی کام نہیں ہوئے اگر ترقیاتی کام ہوئے ہیں تو ہمیں بتایاجائے انہوں نے کہاکہ مینڈیٹ چوری کرنیوالے پارلیمنٹ میں غیر پارلیمانی زبان استعمال کررہے ہیں ،ہم جیبیں ا ور ٹینکیاں بھرنے والوں کا عوام کے ذریعے احتساب چاہتے ہیں ،عوام ان لوگوں کے خلاف اٹھ کھڑے ہوں ،انہوں نے کہاکہ سی پیک پاکستان پیپلزپارٹی کامنصوبہ ہے اس کے خلاف ہونیوالے سازشوں کو ہم سب کو ملکر ناکام بنانا ہوگا ،انہوں نے کہاکہ ووٹ ضمیر کی آواز ہوتی ہے جس سے عوام ضمیر کے مطابق ہی استعمال کرے اور جو لوگ انہیں بھول چکے ہیں انہیں ووٹ نہ دیں ،انہوں نے کہاکہ انتخابات قریب آرہے ہیں اس لئے عوام کو بھول جانیوالے اب عوام سے ووٹ کا بھیک مانگیں گے،ان کاکہناتھاکہ کوئٹہ پر قبضہ مافیا کا راج قائم ہوچکاہے ،جس کی ہم مذمت کرتے ہیں ،پارٹی کے صوبائی جنرل سید اقبال شاہ نے نئے شامل ہونے والوں کو خوش آمدید کہااورامید ظاہر کی کہ وہ پارٹی پیغام کو عوام کرنے کیلئے اپنی توانائیاں بروئے کارلائینگی ،انہوں نے کہاکہ وہ شہیدوں کے وارثوں کی لشکر میں شامل ہوئے ہیں انہیں کسی صورت بھی مایوس نہیں کیاجائیگا جبکہ پاکستان پیپلزپارٹی کے وفاقی وزیر سردارعمر گورگیج کاکہناتھاکہ پاکستان پیپلزپارٹی شہدوں کی جماعت ہے ،دنیا جانتی ہے کہ ہماری پارٹی کی لیڈرشپ نے عوام اور اس ملک کی خاطر جانوں کے نذرانے پیش کئے ،انہوں نے کہاکہ نوازشریف ٹھیک انداز سے حکمرانی نہیں کرتے کیونکہ وہ کاروباری ذہنیت کے مالک ہے ،انہوں نے کہاکہ 25ارب روپے کے فنڈز کالیپس ہونا کسی المیہ سے کم نہیں ،سابق صوبائی وزیر محمدیونس ملازئی کاکہناتھاکہ پاکستان پیپلزپارٹی غریب اور متوسط طبقے کی موثرآواز ہے ،ہم پارٹی کی مرکزی لیڈرشپ کی جانب سے میر حاجی علی مدد جتک کو پارٹی کا صوبائی صدر منتخب کرنے پر انہیں خراج تحسین پیش کرتے ہیں ،ان کاکہناتھاکہ قوم اور مذہب کے نام پر سیاست کرنیوالوں نے عوام کو مایوس کردیاہے ،جلسے سے خطاب کرتے ہوئے پیپلزپارٹی کے رہنماء حاجی اشرف کاکڑ،شہزادہ کاکڑاورملک حمیدکاکڑ کاکہناتھاکہ پاکستان میں بھٹو اور اینٹی بھٹو پالیسیاں کام کررہی ہے ،بھٹو کی پالیسی غریب عوام کو ان کے حقوق دلاناتھے اورجاگیر دارانہ نظام کاخاتمہ کرناتھااسی جدوجہد میں وہ اس کے بیٹے اورہمارے شہید قائد بی بی نے بھی جام شہادت نوش کیا،جس پر ہمیں فخر ہے ،اس سے قبل نئے شامل ہونے والے حمیداللہ مینگل ،ملک علی احمد ،عثمان مینگل ،نور احمد دہوار ،برکت مینگل ،شاہجہان ،عبدالشکور ،شعیب دہوار ،شکیل احمداوردیگر کاکہناتھاکہ اس وقت ملک وقوم کودرپیش مشکلات کا واحدحل پاکستان پیپلزپارٹی کی سیاست اور لیڈرشپ ہے، ہم نے سوچ وبچار کے بعد اس جماعت میں شامل ہونے کافیصلہ کیاہے اور تادم مرگ اس کاحصہ رہیں گے اور اس کے پیغام کو عام کرینگے۔