|

وقتِ اشاعت :   January 14 – 2017

ملک بھر میں شدید بارشیں اور برف باری کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہو گیا جبکہ مختلف حادثات و واقعات میں 2 افراد جاں بحق ہو گئے۔

اوچ شریف، بھکر، پڈ عیدن اور ملتان سمیت جنوبی پنجاب کے کئی شہروں میں شدید بارش کے باعث سردی کی شدت میں اضافہ ہو گیا ہے جب کہ ڈیرہ غازی خان کے سیاحتی مقام فورٹ منرو میں موسم سرما کی پہلی برفباری کے بعد سیاحوں کی بڑی تعداد نے تفریحی مقام کا رخ کر لیا ہے۔

شمالی علاقوں میں بھی پہاڑوں پر برفباری کے باعث کئی شہروں کا دیگر شہروں سے زمینی رابطہ منقطع ہو گیا ہے، شدید برفباری کے باعث لواری ٹنل بند ہونے سے عوام کو مشکلات کا سامنا ہے جب کہ لواری ٹاپ پر شدید برفباری کے باعث ایک بچہ جاں بحق بھی ہوا۔ مری میں بھی برفباری کے باعث سیاحوں کا تانتا بندھ گیا اور ہوٹل مالکان نے کمروں کا منہ مانگا کرایہ وصول کرنا شروع کر دیا ہے۔

بلوچستان میں بھی بارشوں اور برفباری کا سلسلہ جاری ہے، کوئٹہ میں شدید برفباری کے باعث ہر چیز سے سفید چادر اوڑھ لی ہے جب کہ سنجاوی  شہر اور گردو نواح میں 17سال بعد شدید برفباری کا سلسلہ جاری ہے اس کے علاوہ  لورالائی میں بھی 20 سال بعد پہلی برفباری سے شہریوں کے چہرے کھل اٹھے ہیں۔ سنجاوی میں برفباری کے باعث زیارت ہرنائی شاہراہ ٹریفک کیلئے بند کر دی گئی ہے۔

زیارت شہر میں ایک فٹ اور پہاڑوں پر ڈیڑھ فٹ تک برفباری ریکارڈ کی جا چکی ہے جبکہ سردی کی شدت بڑھنے سے گیس کے پریشر میں بھی کمی آ گئی ہے جس نے شہریوں کی مشکلات بڑھا دی ہیں۔ خضدار میں شدید بارش کے باعث مکان کی چھت گرنے سے ایک شخص جاں بحق ہوگیا۔