|

وقتِ اشاعت :   7 دِن پہلے

کابل: افغان سیکیورٹی فورسز نے دعویٰ کیا ہے کہ انہوں نے 2 دن تک جاری رہنے والی شدید لڑائی کے بعد صوبہ ہلمند کے اہم ترین ضلعے نوا بارکزئی سے طالبان کا قبضہ چھڑا لیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق افغان حکام کا کہنا ہے کہ طالبان کے مضبوط ترین گڑھ سمجھے جانے والے صوبے ہلمند میں افغان فورسز کی پیش قدمی کا سلسلہ جاری ہے۔ افغان فورسز نے دو روز تک جاری رہنے والے شدید لڑائی کے بعد صوبہ ہلمند کے دارالحکومت لشکر گاہ کے جنوب میں واقع اہم ضلعے نوابارکزئی سے طالبان کا قبضہ چھڑا لیا اور اس دوران طالبان کے 50 سے زائد جنگجوؤں کو بھی ہلاک کیا گیا۔

افغان وزارت دفاع کے ترجمان دولت وزیری نے اس بات کی تصدیق کی اور کہا کہ افغان فوسرز نے ضلعے کا کنٹرول سنبھال لیا ہے اور اس دوران طالبان کے زیر استعمال گاڑیاں اور آلات بھی تباہ کیے گئے۔

حکام کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز کا آپریشن جاری رہے گا اور اب وہ گرمسیر قصبے کی جانب پیش قدمی کریں گی۔

خیال رہے کہ اس آپریشن میں افغان فورسز کو امریکی فوجی مشیروں، امریکی ایف سولہ طیاروں اور اپاچی ہیلی کاپٹرز کی فضائی معاونت بھی حاصل ہے اور وہ طالبان کو ہلمند کے دارالحکومت لشکر گاہ پر قبضہ کرنے سے روکنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

طالبان افغانستان میں اپنی حکومت قائم کرنے کے خواہاں ہیں اور غیر ملکی افواج کی حمایت یافتہ حکومت سے چھٹکارا حاصل کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔ طالبان کمانڈرز یہ کہہ چکے ہیں کہ افغانستان سے آخری غیر ملکی فوجی کے نکل جانے تک جنگ جاری رہے گی۔