|

وقتِ اشاعت :   September 14 – 2017

کوئٹہ: بلوچستان نیشنل پارٹی کے قائمقام صدر ملک عبدالولی کاکڑ نے کہا ہے کہ بلوچستان کے نام نہاد اقتدار میں شامل قوم پرستوں نے صوبے کو دیوالیہ بنا دیا اور تمام تر زمینیں فروخت کر دیئے پشتون پرستی اور بلوچ پرستی کو اپنے مفادات میں تبدیل کر دیا گیا ۔

بلوچستان نیشنل پارٹی صوبے کے عوام کی صحیح معنوں میں ترجمان کر رہی ہے اور ہر فورم پر عوام کی حقوق کی بات کی ہے ان خیالات کا اظہار انہوں نے زیارت میں پریس کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کیا اس موقع پرملک نصیر شاہوانی، اختر حسین لانگو ودیگر بھی موجود تھے احسان اللہ کاکڑ نے ساتھیوں سمیت جمعیت علماء اسلام سے مستعفی ہو کر بلوچستان نیشنل پارٹی میں شمولیت کا اعلان کر دیا ۔

انہوں نے کہا ہے کہ بلوچستان نیشنل پارٹی نے جس طرح پشتونوں اور بلوچوں کے حقوق کیلئے جدوجہد کی کسی بھی سیاسی جماعت نے نہیں کی ہے کیونکہ آج جو لوگ اقتدار میں ہے وہ عوام کے منتخب کر دہ نمائندے نہیں بلکہ دوسروں کے منتخب کر دہ نمائندے ہیں اس لئے ہزاروں ایکڑ زمین گوادر میں دوسروں کو الاٹ کر دیا گیا اور ساتھ ہی ساحل ووسائل کی باتیں کرنے والوں نے چند مفادات کی خاطر قوم کو دھوکہ دیا اور اپنی ذات تک محدود ہو کر رہ گئے ہیں ۔

آئندہ انتخابات میں ان قوتوں کا سہ فریقی اتحاد ڈٹ کر مقابلے کرے گی این اے260 کے انتخابات میں بھی عوامی نیشنل پارٹی ، بی این پی اور ہزارہ ڈیمو کریٹک پارٹی نے ڈٹ کر مقابلہ کیا اور آئندہ انتخابات میں بھی عوام کی طاقت سے ان ضمیر فروشوں کو شکست دینگے ۔

انہوں نے کہا ہے کہ اگر بی این پی صرف بلوچوں کا پارٹی نہیں بلکہ اس مین بلوچستان کے تمام قبائل شامل ہیں انہوں نے کہا ہے کہ بڑی تعجب کی بات ہے کہ زیارت جیسا پر فضا مقام کی سڑکیں تعلیم اور صحت کی سہولیات نہ ہونے کے برابر ہے ۔

انہوں نے کہا ہے کہ پشتون وبلوچ قوم پرست وزراء نے صوبے اور عوام کے لئے کچھ نہیں کیا اس دور میں جتنی کرپشن ہوئی تاریخ میں اس کی مثال نہیں ملتی انہوں نے کہا ہے کہ بلوچستان کے نام نہاد اقتدار میں شامل قوم پرستوں نے صوبے کو دیوالیہ بنا دیا اور تمام تر زمینیں فروخت کر دیئے پشتون پرستی اور بلوچ پرستی کو اپنے مفادات میں تبدیل کر دیا گیا بلوچستان نیشنل پارٹی صوبے کے عوام کی صحیح معنوں میں ترجمان کر رہی ہے اور ہر فورم پر عوام کی حقوق کی بات کی ہے۔