|

وقتِ اشاعت :   December 6 – 2017

کوئٹہ: بلوچستان کے ضلع ہرنائی میں ریلوے پٹڑی کی بحالی کے منصوبے پر کام کرنے والے 3 مزدوروں کو نامعلوم افراد نے فائرنگ کرکے قتل اور ایک کو زخمی کردیا۔ 

لیویز کے مطابق واقعہ منگل کی رات کو ہرنائی سے تقریبا پچیس کلومیٹر دور تحصیل شاہرگ کے علاقے کلی روغانی اصفہانی میں شادر بابا مزار کے قریب پیش آیا جہاں نامعلوم افراد نے مزدوروں کے کیمپ پر حملہ کیا اور اندھا دھند فائرنگ کی۔ ڈپٹی کمشنر ہرنائی عبدالسلام اچکزئی نے تصدیق کی کہ حملے میں تین مزدور جاں بحق ہوگئے جن کی شناخت عصمت اللہ ،اختر محمد اور نعمت اللہ کے ناموں سے ہوئی ہے۔ 

تینوں مزدوروں کا تعلق ژوب سے تھا۔ سیکورٹی ذرائع کے مطابق مزدور نیشنل لاجسٹک سیل کے پراجیکٹ کے تحت سبی تا ہرنائی ریلوے پٹڑی کی بحالی کے منصوبے پر کام کررہے تھے۔ حملے کے وقت 9 مزدور کیمپ میں موجود تھے جن میں سے چھ نے بھاگ کر جانیں بچائیں۔ بچ جانے والوں میں ایک مزدور رحمت اللہ بھی زخمی بتایا جاتا ہے۔

فائرنگ کے بعد دہشتگردوں نے مزدوروں کے کیمپ کو نذر آتش کردیا اور فرار ہوگئے۔ واقعہ کی اطلاع ملتے ہی ایف سی اور دیگر سیکورٹی اداروں کے اہلکار موقع پر پہنچ گئے اور لاشوں کو تحویل میں لے لیا۔

حملے میں کالعدم علیحدگی پسند تنظیم کے ملوث ہونے کا خدشہ ظاہر کیا جارہا ہے۔ یادر ہے کہ رواں سال اگست میں بھی شاہرگ میں سڑک کنارے نصب بم دھماکے کے نتیجے میں چھ ایف سی اہلکار شہید ہوئے تھے۔