|

وقتِ اشاعت :   December 7 – 2017

کوئٹہ: صوبائی وزیر پبلک ہیلتھ انجینئرنگ /واسا نواب محمد ایاز خان جوگیزئی نے کہا ہے کہ گوادر کی عوام کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کیلئے فوری طور پر اقدامات کئے جائیں سیکرٹری پی ایچ ای اور متعلقہ افسران اس سلسلے میں گوادر کا دورہ کرکے ڈی سیلی نیشن پلانٹ کی فوری مرمت اور بحالی کیلئے عملی اقدامات اٹھائیں ۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز سیکرٹری پی ایچ او ڈاکٹر اسلم محمد شہی اور محکمے کے دیگر افسران سے ملاقات کے دوران بات چیت کرتے ہوئے کیا اس موقع پر صوبائی وزیر کو گوادر میں پانی کی فراہمی میں درپیش مسائل سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا گیا کہ ٹینکرز کے ذریعے گوادر کے عوام کو پانی کی فراہی کے اخراجات اتنے زیادہ ہیں کہ صوبائی حکومت کو اس سلسلے میں دقت پیش آ رہی ہے ۔

گوادر میں موجود ڈی سیلینیشن پلانٹ کے ان ٹیک سسٹم جس کے ذریعے سمندر سے پلانٹ تک پانی پہنچایاجاتا ہے کے غیر معیاری ہونے کی وجہ سے استعمال کے قابل نہیں جس کی مرمت کیلئیتقریبا80کروڑ کی خطیر رقم درکار ہوگی ۔

اس موقع پر صوبائی وزیر نے سیکرٹری پی ایچ ای ڈاکٹر محمد اسلم محمد شہی کو ہدایات جاری کیں کہ وہ فوری طور پر گوادر کا دورہ کر کے مکمل رپورٹ دیں تاکہ وزیراعلیٰ بلوچستان اور چیف سیکرٹری سے ملاقات میں اس پلانٹ کو چلانے کیلئے درکار رقم کی فراہمی کیلئے اقدامات اٹھائے جا سکیں کیونکہ 21مارچ کے بعد سمندر میں کام نہیں ہو پائے گا اور ٹینکرز پر کروڑوں کے اخراجات آتے رہیں گے ۔

صوبائی وزیر نے متعلقہ ایکس ای این کو ہدایت کی کہ وہ دن رات گوادر کی عوام کی خدمت کریں اور اس سلسلے میں کسی قسم کی کوتاہی برداشت نہیں کی جائیگی۔