|

وقتِ اشاعت :   5 days پہلے

کوئٹہ :  بلوچستان اسمبلی کے نئے قائد ایوان کے انتخاب کیلئے ووٹ کا عمل آج ہوگا پاکستان مسلم لیگ(ن) ،مسلم لیگ(ق) کے متفقہ اور متحدہ اپوزیشن کی حمایت یافتہ امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو اور پشتونخوامیپ کے عبدالرحیم زیارتوال یا لیاقت آغا کے درمیان مقابلہ ہوگا۔

بلوچستان اسمبلی کے آج ہونے والے اجلاس کے حوالے سے سیکورٹی کے سخت اقدامات کئے گئے ہیں جبکہ بلوچستان اسمبلی کے تمام ملحقہ راستوں کو سیل کر دیا گیا ہے اور ٹریفک پولیس کی جانب سے عوام سے اپیل کی گئی ہے کہ وہ اسمبلی اجلاس کے دوران زرغون روڈ کی بجائے صبح 9بجے رات 9بجے تک متبادل راستوں کو اختیار کریں۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان اسمبلی کااہم اجلاس آج صبح 10بجے ہوگا جس میں 16ویں قائد ایوان کا انتخاب عمل میں لایا جائے گاپاکستان مسلم لیگ(ن) ،مسلم لیگ(ق) کے متفقہ اور متحدہ اپوزیشن میں شامل جماعتوں کی حمایت یافتہ امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو کو نئے قائد ایوان کیلئے نامزد کیاہے میر عبدالقدوس بزنجو کی حمایت کرنے والے متحدہ اپوزیشن کے جماعتوں میں جمعیت علماء اسلام ،بلوچستان نیشنل پارٹی ،عوامی نیشنل پارٹی اور بلوچستان نیشنل پارٹی (عوامی )شامل ہے ۔

گزشتہ روز نئے قائد ایوان کیلئے نامزد امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو نے کھوسہ ہاؤس میں سابق وزیراعلیٰ نواب ثناء اللہ زہری کی حمایت کرنے والے 5اراکین میر اظہار حسین کھوسہ ،سرداردرمحمدناصر ،محمدخان لہڑی ،انیتا ء عرفان اور ثمینہ شکیل سے ملاقات کی اور ان کی حمایت کرنے کی اپیل کی جس پر سابق وزیراعلیٰ نواب ثناء اللہ زہری کی حمایت کرنے والے 5اراکین نے بھی پاکستان مسلم لیگ(ن) ،مسلم لیگ(ق) کے متفقہ اور متحدہ اپوزیشن میں شامل جماعتوں کی حمایت یافتہ امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو کی حمایت کااعلان کیا۔

بلوچستان صوبائی اسمبلی کے اجلاس میں آئین کے آرٹیکل 130کی شق (3) اور (4) جسے قواعد وانضباط بلوچستان صوبائی اسمبلی مجریہ 1974ء کے قاعدہ نمبر 15کے ساتھ پڑھا جائے کے تحت وزیراعلیٰ کا انتخاب عمل میں لایا جائے گا۔

اس سلسلے میں کاغذات نامزدگی برائے انتخاب وزیراعلیٰ بلوچستان جمعہ 12جنوری 2018ء کو صبح 09بجے تا شام 05بجے کے دوران سیکرٹری اسمبلی کے دفتر سے حاصل کئے اور جمع کرائے جاسکتے تھے ،

سیکرٹری صوبائی اسمبلی کے مطابق امیدوار آج صبح اسمبلی اجلاس سے قبل تک انتخابی عمل سے دستبردار ہوسکتے ہیں۔

بلوچستان اسمبلی میں نئے قائد ایوان کیلئے مقررہ وقت 3امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کرائی ہے جن میں سے پاکستان مسلم لیگ(ن) ،مسلم لیگ(ق) کے متفقہ اور متحدہ اپوزیشن کی حمایت یافتہ امیدوار میر عبدالقدوس بزنجو نے کاغذات نامزدگی جمع کرائی ہے ۔

جس میں پہلے فارم میں تجویز کنندہ میرجان محمد جمالی اور تائید کنندہ سرفراز بگٹی جبکہ دوسرے فارم میں تجویز کنندہ سردارصالح بھوتانی اور تائید کنندہ میں پرنس احمد علی ،تیسرے فارم میں تجویز کنندہ ڈاکٹررقیہ ہاشمی جبکہ تائید کنندہ امان اللہ نوتیزئی ،چوتھے فارم میں میر غلام دستگیر بادینی اور تائید کنندہ میر عامر خان رند ،پانچویں فارم میں تجویز کنندہ میر ظفراللہ خان زہری جبکہ تائید کنندہ مولوی معاذ اللہ ہے ۔

پشتونخوا ملی عوامی پارٹی کے دو اراکین اسمبلی عبدالرحیم زیارتوال اور سید لیاقت آغا نے بھی نئے قائدایوان کے لیے کاغذات نامزدگی جمع کرائی ہے جس میں امیدوار عبدالرحیم زیارتوال کے تجویز کنندہ سردار مصطفی ترین اور تائید کنندہ مجید خان اچکزئی ہیں جبکہ سیدلیاقت علی کے تجویز کنندہ عبیداللہ بابت اور تائید کنندہ ولیم جان برکت ہے ۔

مسلم لیگ (ن) نے اپنا پارلیمانی لیڈر نواب چنگیز مری کو منتخب کیا ہے جن کے کاغذات سردار صالح بھوتانی اور پرنس احمد علی نے سیکرٹری اسمبلی کو جمع کروائے ہیں ۔

بلوچستان اسمبلی کے آج ہونے والے اجلاس میں نئے قائد ایوان کیلئے رائے شماری کے بعد نیا وزیراعلیٰ منتخب ہوگا۔

قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے آج بلوچستان اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر سیکورٹی کے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں

اسمبلی سے ملحقہ راستوں کو سیل کردیاگیاہے جبکہ ٹریفک کی روانی کیلئے عوام سے متبادل راستے اختیار کرنے کی اپیل کی گئی ہے ۔