|

وقتِ اشاعت :   5 days پہلے

کوئٹہ :  بلوچستان میں فارنزک لیبارٹری نہ ہونے کی وجہ سے پولیس اور تحقیقاتی اداروں کو دہشتگردی سمیت دیگر جرائم کی تحقیقات میں مشکلات کا سامنا ، جی پی او چوک دھما کے کی جائے وقوع پر پولیس ٹرک اور مسافر بس کئی دن سے مو جود ،سڑک بند رہنے سے شہریوں کو بھی مشکلات کا سامنا ۔

تفصیلا ت کے مطابق بلوچستان میں فارنزک لیبارٹری نہ ہونے کی وجہ سے پولیس کو دہشتگردی کے واقعات میں تحقیقات کر نے میں مشکلات کا سامنا ہے 9جنوری کو کوئٹہ کے علاقے جی پی او چوک کے قریب ہونے والے خودکش دھما کے کے مقام کو تین روز گزر جانے کے باوجود بھی ٹریفک کے لئے نہیں کھولا جا سکا جس کی وجہ سے شہر میں ٹریفک کی روانی میں شد ید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔

دوسری جانب جائے وقوع پر موجود بس اور پولیس کا ٹرک شہریوں کے لئے خوف کی علامت بنا ہوا ہے، اس حوالے سے ایس ایس پی آپریشن کوئٹہ نصیب اللہ خان نے این این آئی کو بتایا کہ صوبے میں دہشتگردی کے واقعات کے بعد لاہور سے فارنزک ٹیم کوئٹہ آتی ہے جو جائے وقوع سے شواہد اکھٹے کر نے کے بعد اپنی رپورٹ پیش کر تی ہے تاہم اگر یہی لیبارٹری کوئٹہ میں ہو تو اس سے کافی حد تک تحقیقات میں مدد ملے گی۔

انہوں نے کہا کہ اس بار پنجاب سے فارنزک ٹیم کو طلب کر نے کی بجائی پولیس نے از خود شواہد اکھٹے کر نے کے بعد ڈ ی این اے کے نمونے اور دیگر شواہد آج لاہور روانہ کر دئیے جائیں گے جبکہ جی پی او چوک دھما کے کی جائے وقوع کو بھی آج ٹریفک کے لئے کھو ل دیا جائے گا ۔واضع رہے کوئٹہ شہر میں فارنزک لیبارٹری کے قیام کا منصوبہ منظوری کے بعد صرف فائلوں تک محدود ہوچکا ہے