|

وقتِ اشاعت :   February 14 – 2018

کوئٹہ: کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد کی فائرنگ سے فرنٹیئر کور بلوچستان کے4 اہلکار شہید ہو گئے شہید ہونیوالے اہلکار علاقے سے گزرنے والے ریلوے لائن کے چیکنگ کرنے پر تعینات تھے واقع کے بعد آئی جی پولیس اور دیگر اعلیٰ حکام جائے وقوع پر پہنچے اور علاقے کی ناکہ بندی کر کے لا شوں کو ضروری کا رروائی کے بعد سی ایم ایچ منتقل کر دیا گیا ۔

تفصیلات کے مطابق کوئٹہ کے علاقے لانگو آباد کے قریب نامعلوم مسلح افراد نے فائرنگ کر کے گشت کرنے والے دو موٹرسائیکلوں پر ایف سی کے چار نوجوانوں کو نشانہ بنایا اور چاروں اہلکار لانس نائیک اسلم،نائیک محمد سعید ،لانس نائیک شبیر،سپاہی امجدموقع پر شہید ہو گئے ۔

واقع کی اطلاع ملتے ہی آئی جی پولیس اور ایف سی کی اعلیٰ حکام جائے وقوع پر پہنچے جبکہ وزیراعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو اور وزیر داخلہ میر سرفراز بگٹی بھی موقع پر پہنچے اور جگہ کا معائنہ کیا پٹرولنگ کرنے والے فرنٹیئر کور کے اہلکار لانگو آباد کے قریب علاقے سے گزرنے والے ریلوے ٹرین کی چیکنگ پر تعینات تھے ۔

آئی جی پولیس معظم جاہ انصاری نے صحافیوں کو بتایا کہ بدھ کو کوئٹہ ریلوے سٹیشن کے قریب مینگل آباد کے علاقے میں صبح آٹھ بجے کے قریب مسلح افراد نے دو موٹر سائیکلوں پر سوار ایف سی یعنی فرنٹیئر کور کے چار اہلکاروں پر فائرنگ کر دی۔ا نہوں نے بتایا کہ فائرنگ کے نتیجے میں چاروں اہلکار جاں ہو گئے جن کی لاشوں کو ہسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جبکہ حملہ آور فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔

آئی جی پولیس نے بتایا کہ جاں بحق ہونے والے اہلکار علاقے سے گزرنے والی ریلوے لائن کی چیکنگ کی ڈیوٹی پر تعینات تھے۔حکام کا کہنا ہے کہ علاقے میں شدت پسندوں کی جانب سے ریلوے ٹریک پر دھماکہ خیز مواد نصب کرنے کے خدشات کے پیش نظر ٹریک کو روزانہ کی بنیاد پر چیک کیا جاتا ہے۔

خیال رہے کہ کوئٹہ میں سکیورٹی اہلکاروں پر حملے کے واقعات ایک عرصے سے جاری ہیں جن میں پولیس کے اعلی حکام کے علاوہ بڑی تعداد میں اہلکار ہلاک ہو چکے ہیں۔صوبائی دارالحکومت میں سکیورٹی اہلکاروں کے علاوہ وکلا اور عام شہریوں کو بھی شدت پسندی کے واقعات میں نشانہ بنایا جا چکا ہے ۔

دریں اثناء گورنر بلوچستان محمدخان اچکزئی ، وزیراعلیٰ میر عبدالقدوس بزنجو اور مشیر اطلاعات انوارالحق کاکڑ نے کوئٹہ میں ایف سی اہلکاروں کو ٹارگٹ کرنے کے واقعے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اس طرح کے واقعات سے دہشت گردی کیخلاف ہمارے عزم کو کمزور نہیں کرسکتا ۔

گورنر بلوچستان محمد خان اچکزئی نے نامعلوم افراد کی فائرنگ سے 4ایف سی اہلکاروں کی شہادت پر دلی رنج وغم اور افسوس کا اظہار کرتے دہشت گردی کے اس واقعہ کی شدید مذمت کی ہے ،انہوں نے کہا کہ دہشت گردی وتخریب کاری کی ہرشکل قابل مذمت ہے ہم کسی کو معاشرے میں خوف وہراس پھیلانے کی ہرگز اجازت نہیں دے سکتے ۔

انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں پر زور دیا کہ دہشت گردی کے اس واقعہ میں ملوث عناصر کو جلد ازجلد گرفتار کرکے قانون کے کٹہرے میں لایا جائے تاکہ انکوکیفر کردار تک پہنچایا جائے ،گورنر نے شہید اہلکاران کے لواحیقین ہے اظہار ہمداردی وافسوس کرتے ہوئے شہدا کے درجات کی بلندی کی دعا کی ہے۔

وزیراعلیٰ بلوچستان میر عبدالقدوس بزنجو نے کوئٹہ کے علاقے لانگو آباد میں دہشت گردوں کی فائرنگ سے چار سیکیورٹی اہلکاروں کی شہادت پر دکھ اورافسوس کا اظہار کرتے ہوئے دہشت گردی کے اس واقعے کی شدید الفاظ میں مذمت کی ہے۔

اپنے ایک مذمتی بیان میں وزیراعلیٰ نے کہا کہ دہشت گردوں کے بزدلانہ حملے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ہمارے عزم کو کمزور نہیں کرسکتے۔ امن وامان کے قیام میں جام شہادت نوش کرنے والے سیکیورٹی اہلکار ہماری قوم کے اصل ہیرو ہیں جنہوں نے اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا ان کی قربانی رائیگاں نہیں جائیں گی۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ دہشت گردی میں ملوث عناصر کسی قسم کی رعایت کے مستحق نہیں ان کے خلاف بھرپور اور منظم طریقے سے کاروائی عمل میں لائی جائے اور اس طرح کے واقعات میں ملوث عناصر کو جلد قانون کے کٹہرے میں لا کھڑا کیا جائے۔

دہشت گردی کے حملے میں شہید اہلکاروں کے لواحقین سے ہمدردی اور تعزیت کا اظہار کرتے ہوئے وزیراعلیٰ نے شہداء کے درجات کی بلندی کیلئے دعا کی،صوبائی مشیر اطلاعات انوار الحق کاکڑنے کوئٹہ کے علاقے لانگوآباد میں دہشت گردی کی فائرنگ سے سیکورٹی اہلکاروں کی شہادت کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اس افسوس ناک واقعہ پر گہرے رنج و افسوس کا اظہار کیا ہے۔

اپنے مذمتی بیان میں مشیر اطلاعات نے کہا کہ اس قسم کی بزدلانہ کارروائیوں سے حکومت کے دہشت گردی کے خلاف عزم میں ہر گز کمی نہیں ہوگی اور دہشت گردوں کو انکے کئے کی سزا مل کررہے گی ۔

انہوں نے فائرنگ سے شہیدہونے والے سیکورٹی اہلکاران کے لواحقین سے تعزیت اورہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے شہداء کے درجات کی بلندی اور پسماندگان کیلئے صبر جمیل کی دعا کی ہے۔