|

وقتِ اشاعت :   February 15 – 2018

کوئٹہ: بلوچستان نیشنل پارٹی کے مرکزی رہنماء نوابزادہ حاجی لشکری رئیسانی نے ایچ ای سی کے زیر اہتمام میڈیکل کالجز کیلئے لئے جانے والے ٹیسٹ میں بے ضابطگیوں کے خلاف احتجاج پر بیٹھے طلباء وطالبات کے مطالبات کی حمایت کرتے ہوئے حکومت سے متاثرہ طلباء وطالبات کی داد رسی کیلئے نتائج کی منسوخی کا مطالبہ کیا ۔

کوئٹہ پریس کلب کے باہر گزشتہ 10روز سے احتجاج پر بیٹھے طلباء وطالبات سے اظہار یکجہتی کے موقع پر نوابزادہ لشکری رئیسانی کا خطاب کرتے ہوئے کہناتھا کہ صوبے کے باپردہ بچیوں کاشدیدسردی میں گزشتہ 10روز سے احتجاج پر بیٹھنے کے باوجودان کے مطالبات کی عدم منظوری بلوچ سماج کیلئے لمحہ فکریہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ تعلیمی پسماندگی کے شکار صوبے میں ایسے ناروا اقدامات ناقابل برداشت ہیں ان کاکہناتھا کہ متاثرہ طلباء وطالبات کی شکایات کا ازالہ کرنا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے حکومت انصاف کے تقاضے پورے کرتے ہوئے متاثرہ طلباء وطالبات سے ہونے والی زیادتیوں کا ازالہ کرے تاکہ مستقبل میں میرٹ کا گلہ گھونٹنے والوں کا رستہ روکاجاسکے ۔

ان کاکہناتھا کہ بلوچستان نیشنل پارٹی متاثرہ طلباء وطالبات کے ساتھ شروع دن سے کھڑی ہے جلد پارٹی کا اجلاس طلب کرکے طلباء کے ساتھ ہونے والی زیادتیوں پر آئندہ کا لائحہ عمل طے کیاجائے گااورطلباء وطالبات کوپارٹی کے قانونی ماہرین کی جانب سے معاونت فراہم کی جائے گی ۔

اس موقع پر احتجاج پر بیٹھے طلباء وطالبات کو یقین دہانی کراتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ بلوچستان نیشنل پارٹی اپوزیشن کا حصہ ہونے کے ناطے وزیراعلیٰ بلوچستان اور صوبائی وزیر صحت سے فوری مسئلے کے حل کامطالبہ کرتی ہے اورجلد اعلیٰ حکام سے ملاقات کرکے نتائج کی منسوخی اورطلباء سے ہونے والی زیادتیوں بارے بات چیت کرینگے۔

نوابزادہ لشکری رئیسانی کی یقین دہانی کا طلباء وطالبات نے خیر مقدم کرتے ہوئے کیمپ آکر یکجہتی کرنے پر ان کا شکریہ ادا کیا نوابزادہ لشکری رئیسانی نے کوئٹہ پریس کلب کے باہر احتجاج پر بیٹھے این ٹی ایس پاس امیدواروں کے احتجاجی کیمپ میں بھی جاکران سے یکجہتی کا اظہار کیا۔

اس موقع پر ان کا خطاب کرتے ہوئے کہنا تھا کہ صوبائی حکومت کا مختلف سرکاری محکموں میں عارضی بنیادوں پر تقرری کا فیصلہ غیر قانونی ہے حکومت اگر واقعی صوبے سے بے روزگاری کا خاتمہ چاہتی ہے توعارضی کی بجائے مستقل بنیادوں پر بے روزگار نوجوانوں کو سرکاری محکموں میں تعیناتی یقینی بنائے اس موقع پر سابق صوبائی وزیر اسماعیل گجرودیگر بھی انکے ہمراہ تھے۔