آزات جمالدینی ءِ زند ءُُ ازم

Posted by & filed under بلوچی.

گڈا آئی پہ شونکار ی واجہ آزات درجت ۔آزات لہتیں وہد ءَ ساری ی چہ جیل دراتکگ ات وہدے بلوچستان ءَ سیاسی سروک راجکار ی چست ءُُ ایراں دزگیر کنگ بوت گڈا آہاں آزات جمالدینی ہم ہوار ات آ داں شش کلی کیمپ ءُُ کوئٹہ سیٹرل جیل ءَ بندکنگ بوت ۔

آزات جمالدینی ءِ زند ءُُ ازم

Posted by & filed under بلوچی.

اے زمانگ ءَ نوشکی ءِ پولیٹکل ایجنٹ کپٹن کول ات ۔کپٹن کول ءَ بلوچی وانگ ءِ ہب بوت اسل ءَ اے گپ ہم ہست ات اے وڑیں اگدہ داراں اگاں ہندی زبان ہیل کتیں گڈا آہاں ہمے زبان ءِ درگت ءَ الاونس رست کول ءَ گورنمنٹ ہائیر مڈل سکول ہیڈ ماسٹر ءَ را دزبندی کت ءُُ ہیڈماسٹر ءَ واجہ عبدالواحد آزات جمالدینی ءُُ را گچین کت ۔آزات کپٹن کول ءَ را بلوچ وانیت ۔

آزات جمالدینی ءِ ازم

Posted by & filed under بلوچی.

آزات جمالدینی ءِ کستریں برات بلوچی زانتکار ءُُ کواس ءُُ زبان زانت واجہ عبداللہ جان جمالدینی ،عبدالواحد آزات ءِ شعری دپتر رژن ءِ پیشگال ءَ نبشتہ کنت ’’ عبدالواحد آزات جمالدینی مئے پت ءِ نبشتگ ءِ رد ءَ ۱۹۱۲ میلادی دوشبنہ ءِ روچ ءَ ماں جمالدینی میتگ ءَ ودی بوت ۔

نوح اپنی کشتی بنا رہا ہے ایک کنکر اور ساکن لہریں

Posted by & filed under کالم / بلاگ.

جب ایک اتوارپہلے باضابطہ طورپردو دیرینہ دوستوں کو پارٹی سے نکال دیا گیا تواگلے اتوار (11دسمبر)کو ایران نے سیستان و بلوچستان میں پاکستانی مکران کے سرحد کے قریب جنگی مشقیں شروع کردیں توقع کے بر خلاف جوشخص سوشل میڈیا اور پبلک میں پروپیگنڈے کے محاذ پر سب سے زیادہ سرگرم تھا ‘ کے بارے میں خاموشی اختیار کی گئی

رجانک زیوس (اولی بہر)

Posted by & filed under بلوچی.

کروناس دیہانی پت اَت ۔آئی ءَ ’’وھد‘‘ ءَ را وتی نام پر کتگ اَتءُُ گوں وتی گہوار ریھا آروس کت کہ آ زمین ءِ دیھ اَت ۔کروناس ءَ وتی پت ارونس کشت ءُُ وت دیہانی بادشاہ بوت ۔ارونس بزاں ’’اولی‘‘’’ بنکی‘‘ ارونس ءَ مرگ ءِ وھد ءَ آئی ءَ را گشت کہ ’’ تو من ءَ کشے ءُُ منی تحت ءَ چہ من پُلے، بلئے تئی جندءِ چک ترا چہ تئی تحت ءَ زبہر کنت ،پرچکہ بدی ءِ آسر بدی اِنت، پمشکہ کروناس ءَ وتی انان گپت۔ آئی ءَ چکے کہ بوت ہما ساھت ءَ پلک اِت ئےِ اولی سیہیں جنک ہیسٹیا ،ڈیمیٹر ءُُ ھرا، پدا دوئیں بچ حادث ءُُ پوسیڈن۔ یک یک ءَ آئی ءَ دراہ پلک اِت انت۔ ریھا سک پریشان اَت، آئی ءَ وتارا دلجم کت کہ آ آئی ءِ آؤکیں چک ءَ ہچ وڑا نہ وارت ۔آ سدک اَت کہ اے نوکیں چک بچکے۔

ماما عبداللہ جان۔ ایک تاثر

Posted by & filed under کالم / بلاگ.

بلوچستان کے تمام رومانوی عشاق شے مرید، حمل، کیا، لٰلہ، عزت، مست توکلی، کمبر، فریاد، بیبگر، دوستین پنوں ، اور شہداد کو اگر کمپوٹر میں ایک خاص سوفٹوئیر کے ساتھ تمام انسانی اقداری خوبیوں کے ساتھ فیڈ کیا جائے تو انکا جو آؤٹ پُٹ نکل کر آئیں گے وہ ماماعبداللہ جان ہیں،

سیاسی عجائبات اور ایک خالی سیٹ

Posted by & filed under کالم / بلاگ.

بلوچستان سیاسی اور انتظامی عجائبات کا صوبہ ہے حالیہ عجوبہ یہ ہے کہ بلوچستان اس وقت پاکستان کا واحد صوبہ ہے جس کے تمام جامعات میں کوئی پرووائس چانسلر موجود نہیں آپ حق بجانب ہونگے اگر کہیں کہ یہ کونسی بڑی بات ہے جب 2013ء کے نگراں دور حکومت میں بلوچستان پاکستان کا واحد صوبہ تھا کہ ایک اکلوتے وزیراعلیٰ نے جرات اور بہادری کا مظاہرہ کرتے ہوئے تن تنہا بلوچستان میں نہ صرف الیکشن کروائے بلکہ پورے پاکستان میں سب سے زیادہ کامیاب انتخابات کا سہرا بھی سر پہ سجالیا تھا ۔ عام انتخابات کے بعد منتخب وزیراعلیٰ نے پورے پاکستان میں سب سے پہلے بلوچستان میں بلدیات انتخابات کرانے کا اعلان کردیا اور بلدیاتی انتخابات کے بعد صوبے کے الیکشن کمشنر نے اپنے ایک ٹی وی انٹر ویو میں اعتراف کیا تھا کہ ’’ہمیں اونٹ کو رکشے میں بٹھانے کی استداد کی گئی سو ہم نے کردکھایا‘‘

گھرمیں آٹا نہیں اور۔۔۔

Posted by & filed under بین الاقوامی.

مشرف دور میں جب گوادر ڈیپ سی گوادر پورٹ کا منصوبہ چین کے حوالے کردیا گیا تو بلوچ سیاسی قیادت میں ہلچل مچ گئی اور یہ خدشہ سراٹھانے لگ گیا کہ اس منصوبے کے شروع ہونے کے بعد بلوچ اپنی سرزمین پر اقلیت میں تبدیل ہوجائیں گے البتہ ابتدائی دنوں میں مولانا عبدالحق کے علاوہ تمام مکرانی مڈل کلاس اور غیر مڈل کلاس قیادت اس منصوبے

بلوچستان پبلک سروس کمیشن سیاست کے شکنجے میں

Posted by & filed under کالم / بلاگ.

نواب اکبر خان بگٹی کے وزارت اعلیٰ کے دوران اور جنرل پرویزمشرف کے ابتدائی دور کے علاوہ بلوچستان پبلک سروس کمیشن ہمیشہ سیاسی پنڈتوں کے زیر نگوں رہا ہے بلوچستان میں مڈل کلاسیہ حکومت کی تشکیل کے بعد سابقہ وزیراعلیٰ بلوچستان اور گفتار کے غازی نے ایک مخصوص پروپیگنڈے کے تحت ایجو کیشن ایمر جنسی اور صحت غیر ایمر جنسی کے ساتھ ساتھ پبلک سروس کمیشن

بلوچ کی اسمگلنگ ،رینجرز کا کاروبار

Posted by & filed under کالم / بلاگ.

عائشہ صدیقہ کی انگشت بدنداں کر دینے والی انکشافات کے بعد سپریم کورٹ کی کراچی میں رینجرز کے تیل کے کاروبار میں ملوث ہونے اور باضابطہ پیٹرول پمپ چلانے کی خبریں کم حیرت کن نہیں ہیں ۔ یہ امر تحقیق طلب ہے کہ ضلع اور تحصیل سطح