وفاقی بجٹ ،بلوچستان کی شاہراہوں کیلئے صرف15ارب روپے مختص

Posted by & filed under لیڈ اسٹوری.

کوئٹہ : آئندہ وفاقی بجٹ میں بلوچستان کو حسب روایت کم سے کم وسائل دینے کی کوشش کی گئی ہے سڑکوں اور ہائی ویزکی تعمیر میں بلوچستان کا حصہ صرف تین فی صد مقرر کیا گیا ہے یعنی این ایچ اے کے 320ارب روپے کے بجٹ میں بلوچستان کا حصہ صرف 15ارب روپے ہوگا اگلے مالی سال کے بجٹ پر عملدرآمد یکم جولائی سے ہوگا ۔

ملاوٹ اور جعلی اشیاء کیخلاف کارروائی

Posted by & filed under خصوصی رپورٹ.

حسب روایت رمضان کے مہینے سے قبل افسر شاہی کی توجہ صرف اور صرف اشیاء کی قیمتوں پر ہوتی ہے رمضان کے ابتدائی چند دنوں تک یہ کارروائی محدود ہوتی ہے اور چند ایک گراں فروشوں کو جرمانہ کیا جاتا ہے اور باقی تین ہفتے ان کو لوٹ مار کی کھلی اجازت ہوتی ہے اس پر کوئی روک ٹوک نہیں ہوتی افسر شاہی سین سے خوبصورتی کے ساتھ خود کو غائب کرتی ہے ۔

بلوچستان حکومت نے ریونیو کے تمام ریکارڈ کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا عمل شروع کردیا

Posted by & filed under بلوچستان.

کوئٹہ : حکومت بلوچستان نے صدیوں پرانے پٹواری راج کے خاتمے کا فیصلہ کرلیا ہے اور ریونیو کے تمام ریکارڈ کو کمپیوٹرائزڈ کرنے کا عمل شروع کردیا ہے اس پر کئی فیزوں میں عملدرآمد ہوگا اس سلسلے میں چار اضلاع کا انتخاب کیا گیا ہے ان میں کوئٹہ، گوادر، جعفرآباد اور پشین شامل ہیں

بلوچستان میں میرٹ کا فراڈ

Posted by & filed under خصوصی رپورٹ.

آئے دن اخبارات میں خبریں چھپ رہی ہیں کہ ملازمتوں میں بھرتی کے دوران انصاف کے تقاضے پور ے نہیں کیے جاتے۔ بڑے بڑے افسران اور طاقتور لوگ کسی نہ کسی بہانہ روزگار کے ذرائع پر قابض ہیں۔ کمزور درخواست دہندگان کے ساتھ نا انصافی ہوتی ہے ، لوگ بلوچستان میں ملازمتیں خریدتے ہیں

ریلوے کی کوئی زمین نہیں ہے۔۔

Posted by & filed under خصوصی رپورٹ.

ایک بار پھر وفاقی وزیر ریلوے سعد رفیق نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ ریلوے کی زمین پر غیر قانونی قبضہ کیا گیا ہے اور یہ قبضہ پنجاب، سندھ اور بلوچستان میں بھی جاری ہے انہوں نے یہ اعلان کیا ہے کہ وہ سپریم کورٹ کو رجوع کریں گے

چترال سے پشین تک ایک صوبہ۔۔۔ ایک موقع

Posted by & filed under خصوصی رپورٹ.

70سال کے بعد دوسری بار یہ موقع ہاتھ آیا ہے کہ پہلے مرحلے میں چترال سے پشین تک ایک صوبے کا قیام عوام کی مرضی سے بنایا جائے۔ یہ موقع اس وقت آیا ہے جب ریاست پاکستان نے یہ فیصلہ کر ہی لیا ہے کہ آزادقبائلی علاقوں خصوصاً فاٹا اور اس کے تمام ملحقہ علاقوں کو کے پی کے میں ضم کیا جائے

بلوچستان ءِ ڈکّال

Posted by & filed under بلوچی.

حاکمانی گیشیں دلگوش وتی راجکاری ءِ سرا انت ءُُ کمے باز ہما سرکاری کارانی سرا کہ آہاں زرمان پمشکہ اشاں بلوچستان ءِ ایندگہ جیڑھ پہ گچینی ڈکال ءِ ہچ سد ءُُ سما نیست ۔ایشی ءِ شاہدی ایش انت کہ جہل ءَ بگرداں برزا

بلوچستان میں جہاز سازی کی صنعت

Posted by & filed under خصوصی رپورٹ.

پاکستانی بلوچستان کا ساحل تقریباً ایک ہزار کلو میٹر طویل ہے جبکہ ایرانی بلوچستان کا ساحل دو ہزار کلو میٹر ہے جو ساحل مکران کہلاتا ہے اور مجموعی طورپر یہ تین ہزارکلو میٹر طویل ہے ۔ ان دونوں ممالک میں اس ساحلی پٹی پر 99فیصد آبادی بلوچوں کی ہے ۔ بلکہ گلف آف اومان کے آدھے حصے پر بھی بلوچ ہی آباد ہیں ۔

گوادر پورٹ ءِ پنچ نوکیں دھکہ

Posted by & filed under بلوچی.

حکومت ءِ نیمگ ءَ گوادر بندن ءَ نوکیں پنچ دھکہ( برت )جوڑ کنگ ءِ سوڈگ باز وشیں حالے ۔چد ءُُ پیسر سرکار ءَ چین ءِ مدت ءُُ کمک ءَ ایوک ءَ سے دھکہ جوڑ کتگ ءُُ ۲۰۰۶ ءَ کار بنا کتگ ۔پدا گوستگیں دہ سالاں بنجاہی حکومت ءَ گوادر بندن ءِ سرا پہیوکے ہم حرچ نہ کتگ