|

وقتِ اشاعت :  

کوئٹہ: وزیراعلیٰ بلوچستان نواب ثناء اللہ خان زہری نے نئے عیسوی سال کے آغاز پر ملک و قوم بالخصوص بلوچستان اور اہل بلوچستان کی ترقی و استحکام کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کیا ہے اور دعا کی ہے کہ آنے والا سال پاکستان کیلئے امن و سلامتی اور خوشحالی کا سال ثابت ہو۔ اپنے ایک بیان میں وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ گذشتہ سال سانحہ سول ہسپتال اور پی ٹی سی میں دہشت گردی کے ذریعہ دہشت گردوں نے ہمارے دلوں پرگہرے زخم لگائے اور ہمارے قابل اور لائق وکلاء اور بہادر پولیس ریکروٹس کو ہم سے جدا کردیا تاہم اللہ کے فضل اور سیکورٹی اداروں کی کوششوں سے ہم نے سانحہ سول ہسپتال کے ذمہ داروں کو کیفر کردار تک پہنچادیا ہے اور پی ٹی سی کے واقعہ اور دہشتگردی کے دیگر واقعات میں ملوث دہشت گردوں اور ان کے سرپرستوں کو بھی انجام تک پہنچائے بغیر ہم چین سے نہیں بیٹھیں گے اور اپنے شہیدوں کے قاتلوں سے چن چن کر بدلہ لیں گے۔ وزیراعلیٰ نے شہید وکلاء اور پولیس ریکروٹس کے ورثہ سے اظہار یک جہتی کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت اور عوام ان کے ساتھ ہیں اور ان کے مسائل کے حل اور مدد و معاونت کیلئے حکومت کوئی کسر اٹھا نہیں رکھے گی۔ وزیراعلیٰ نے ان واقعات کے شہداء بالخصوص پی ٹی سی میں شہید ہونے والے فوج کے کپتان کے ساتھ ساتھ دہشتگردی کے دیگر واقعات میں شہید ہونے والے سیکورٹی اہلکاروں اور شہریوں کو سلام پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی قربانیوں کے نتیجے میں صوبے میں امن بحال ہوا ہے اور ہم ان کی بے مثال قربانیوں کو ہمیشہ یاد رکھیں گے۔ وزیراعلیٰ نے کہا ہے کہ حکومت شہریوں کے جان و مال کے تحفظ کے علاوہ صوبے کے دیرینہ مسائل کے حل اور ترقی کے حوالے سے اپنی ذمہ داریوں سے نہ صرف بخوبی آگاہ ہے بلکہ ان ذمہ داریوں کی ادائیگی میں خلوص نیت سے مصروف عمل ہے گذشتہ سال کے دوران اس حوالے سے مخلوط صوبائی حکومت نے کئی ایک اہداف حاصل کئے ہیں جن میں تعلیم وصحت کے شعبوں کی ترقی کیلئے عملی اقدامات، سماجی شعبہ کی ترقی کیلئے موثر اور جامع منصوبہ بندی اور اس پر عملدرآمد کا آغاز ، پولیو کے خاتمے کیلئے نتیجہ خیز اقدامات 2016-17 کیلئے عوام دوست اور متوازن بجٹ ، صوبے میں مفاہمت ،یک جہتی اور بھائی چارے کی فضاء کے قیام اور فروغ کی کامیاب کوششیں شامل ہیں انہوں نے سی پیک کے حوالے سے جے سی سی کے اجلاس میں بلوچستان کے 12اہم اور بڑے منصوبوں کی شمولیت ، مغربی روٹ سے میگا کانوائے کی گوادر بندرگاہ آمداور مغربی روٹ کی اہم شاہراہوں کی تکمیل کو ایک اہم پیشرفت قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ سی پیک بلوچستان کے عوام کی تقدیر بدل دے گا۔ انہوں نے مزید کہا ہے کہ گذشتہ برس صوبائی حکومت نے صوبے کے وسائل کے بہترین مصرف معدنیات و توانائی اور دیگر شعبوں میں سرمایہ کاری کے فروغ اور متبادل توانائی کے شعبہ میں غیر ملکی سرمایہ کار کمپنیوں کے ساتھ معاہدے بھی کئے جو حکومت کی اہم کامیابی اور سرمایہ کاروں کی بلوچستان میں دلچسپی کے مظہر ہیں۔ انہوں نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ صوبائی حکومت وفاقی حکومت کے تعاون اور عوام کی تائید و حمایت سے صوبے کی تعمیر و ترقی کے اپنے عزم و ارادے کی تکمیل کو آنے والے سال میں بھی یقینی بنائے گی اور بلوچستان کو دیگر ترقی یافتہ صوبوں کے برابر لایا جائے گا۔ نئے سال میں بھی ہماری تمام تر توجہ غربت، جہالت، پسماندگی اور بدامنی کے خاتمے ، تعلیم کے فروغ ، صحت کی سہولتوں میں اضافے، روزگار کی فراہمی، امن واستحکام اور سی پیک کے منصوبوں کی تکمیل پر مرکوز رہے گی۔