متحدہ مجلس عمل کی بحالی

| وقتِ اشاعت :  


ملک کی پانچ اہم ترین مذہبی پارٹیوں نے متحدہ مجلس عمل کی دوبارہ بحالی کا فیصلہ کیا ہے۔ اگلے ایک ماہ کے دوران مذہبی جماعتیں جو اتحادی حکومتوں میں شامل ہیں، حکومتوں کو چھوڑدینگی۔ مولانا فضل الرحمان کو موجودہ حکومت نے کشمیر کمیٹی کا چیئرمین بنایا ہے اس کے علاوہ ان کو مرکزی وزیر کی بھی حیثیت حاصل ہے۔ 



وزیر خزانہ اسحاق ڈار اشتہاری قرار

| وقتِ اشاعت :  


احتساب عدالت نے وزیر خزانہ اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دیتے ہوئے حکم دیا کہ وہ تین دن کے اندر پچاس لاکھ روپے کے ذاتی مچلکے جمع کرائیں ورنہ ان کی تمام جائیداد ضبط کی جائیگی۔ 



ایران سے بہتر تعلقات

| وقتِ اشاعت :  


حال ہی میں ایرانی بلوچستان میں چاہ بہار بندر گاہ کے پہلے مرحلے کا افتتاح ایرانی صدر حسن روحانی نے کیا۔ اس افتتاحی تقریب میں پاکستانی وفد نے وزارتی سطح پر شرکت کی اور دنیا کو یہ پیغام دیا کہ پاکستان اور ایران کے درمیان کوئی معاشی مسابقت نہیں ہے ۔



بلوچستان میں خشک سالی

| وقتِ اشاعت :  


1997ء کے بعد دوسری بار بلوچستا ن کے اکثر علاقے خشک سالی کا شکار ہیں 1997ء سے لے کر 2005ء تک پورے بلوچستان میں خشک سالی رہی اور 2005ء کے آخری مہینوں میں خشک سالی کا خاتمہ ہوا ۔ دوسرے الفاظ آٹھ طویل سالوں تک خشک سالی نے پورے بلوچستان میں تباہی پھیلائی ۔



فاٹا کے انضمام کا فیصلہ ہوگیا

| وقتِ اشاعت :  


وفاقی وزیر جنرل(ر) عبدالقادر بلوچ نے یہ اعلان کیا کہ فاٹا کو کے پی کے میں ضم کرنے کا اصولی طورپر فیصلہ کر لیا گیا ہے ۔ قبائلی علاقوں کا انضمام ایک سال کے عرصے میں ہوجائے گا اور اس پرکام تیز ی سے جاری ہے کیونکہ اس کے لئے مکمل تیاری ضروری ہے جو ایک سے دو سال کا عرصہ لے سکتی ہے۔



یروشلم پر امریکی فیصلہ

| وقتِ اشاعت :  


امریکی صدر ٹرمپ نے توقع کے مطابق یہ فیصلہ کر دیا کہ امریکی سفارت خانہ یروشلم منتقل ہوگا۔ دوسرے الفاظ میں صدر ٹرمپ نے یروشلم کو اسرائیل کا دارالخلافہ تسلیم کر لیا ۔



بلوچستان کے ساتھ امتیازی سلوک

| وقتِ اشاعت :  


پورے ملک میں لوڈشیڈنگ ختم کردی گئی اور بلوچستان کے دارالحکومت سمیت دوردراز علاقوں میں لوڈشیڈنگ اس شدید سرد موسم میں بھی جاری ہے حکومت اور اس کے اکثر اداروں کا بلوچستان سے متعلق دہرا معیار ہے وفاقی حکومت کے اعلان کے بعد نا اہل سابق وزیراعظم نے اس کا کریڈٹ اپنے سر لیا ہے کہ اس کی کاوشوں سے ملک میں لوڈشیڈنگ ختم ہوئی ہے ۔



گوادر پورٹ اور ریلوے کی سہولیات

| وقتِ اشاعت :  


تقریباً دو دہائیوں بعد وزیر ریلوے کی جانب سے اس بات کی تصدیق کی گئی ہے کہ حکومت ریل کے ذریعے گوادر کی بند رگاہ کو جیکب آباد سے ملائے گی ۔ گوادر ‘ خضدار ‘ جیکب آباد ریلوے ٹریک بچھایا جائے گا ۔



بندرچاہ بہار کا افتتاح

| وقتِ اشاعت :  


ایرانی صدر نے چاہ بہاربندر گاہ کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اخباری اطلاعات کے مطابق بندر چاہ بہار کی تعمیر پر ایک ارب ڈالر خرچ ہوں گے۔ اس میں سے بھارت 23کروڑ 50لاکھ ڈالر کی سرمایہ کاری کرے گا۔ بھارت نے وعدہ کیا ہے کہ وہ بندر گاہ کی تعمیر اور توسیع پر 50کروڑ ڈالر خرچ کرے گا۔ بندر گاہ میں دو الگ برتھیں بھارت کے لئے خصوصی طورپر مخصوص ہوں گی ۔ 



یکساں نظام تعلیم

| وقتِ اشاعت :  


آخر کار مشترکہ مفادات کونسل نے یہ فیصلہ کر لیا کہ ملک بھر میں یکساں نظام تعلیم رائج کیاجائے گا ۔ یہ ایک اچھا فیصلہ ہے جو ملک کے تمام صوبوں میں یکساں طورپر رائج ہوگا ۔امیروں اور غریبوں کے لئے الگ الگ اسکول نہیں ہوں گے، اور نہ ہی وہاں سے خودکش بمباروں کی فیکٹریاں تیارہوں گی ۔