افغانستان کا جارحانہ رویہ

| وقتِ اشاعت :  


حالیہ چند ہفتوں کے دوران پے درپے دہشت گردی کے کئی ایک واقعات پیش آئے جن میں پاکستان کے سیکورٹی افواج کے جوان شہید ہوئے۔ ایک روز قبل پاکستانی فوج کے تین جوان اس وقت شہید ہوئے جب افغانستان کی جانب سے ان کو نشانہ بنایا گیا۔ یہ واقعہ مہمند ایجنسی میں پیش آیا۔ 



سیاسی اصلاحات کی ضرورت

| وقتِ اشاعت :  


سیاست میں بعض نووارد افراد پاکستان کی تاریخ اور اس کے عوام کی جمہوریت کے جدوجہد سے آگاہ نہیں ہیں اس لئے وہ ملک میں صدارتی نظام حکومت چاہتے ہیں بلکہ مطالبہ بھی کررہے ہیں کہ موجودہ وفاقی اور پارلیمانی طرز حکومت کو ختم کیا جائے۔ 



کوئٹہ میں صفائی کا فقدان

| وقتِ اشاعت :  


آئے دن کوئٹہ کی معروف شاہراہوں اور خصوصی طور پر سول سیکریٹریٹ کے گرد و نواح میں گٹر ابلتے رہتے ہیں۔ میونسپل انتظامیہ ان مسائل کے بجائے اپنے تجارتی مفادات کو زیادہ ترجیح دیتی نظر آتی ہے۔



الیکشن کی تیاریاں

| وقتِ اشاعت :  


مختلف پارٹیوں کے درمیان معاہدے کے بعد سینٹ نے حلقہ بندیوں کا بل منظور کیا۔ مسلم لی ق کے کامل علی آغا نے بل کی مخالفت میں ووٹ دیا۔



پاکستان سے ترک وطن

| وقتِ اشاعت :  


آئے دن ایران کی سیکورٹی افواج سو کے لگ بھگ پاکستانیوں کو تفتان سرحدی چوکی پر پاکستانی حکام کے حوالے کرتے ہیں۔ ان میں سے 99فیصد لوگوں کا تعلق وسطی پنجاب سے ہوتا ہے۔ یہ وہ ناکام تارکین وطن ہیں جو وزارت داخلہ کے حکام کو لاکھوں روپے رشوت دے کر ایجنٹوں کے ذریعے پنجاب سے ایرانی بلوچستان کا رخ کرتے ہیں۔



ابتر معاشی صورت حال

| وقتِ اشاعت :  


گزشتہ دنوں روپے کی قدر میں کمی واقع ہوگئی اور ڈالر 105سے بڑھ کر112روپے کا ہوگیا۔ اس سے قبل آئی ایم ایف نے یہ مشورہ دیا تھا کہ روپے کی قدر میں 15سے 20فیصد کمی کی جائے۔



خطے کی خطرناک صورت حال

| وقتِ اشاعت :  


ایوان بالا میں اس بات پر تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے کہ پاکستان کو مشرقی وسطیٰ کی جنگ میں گھسیٹا جارہا ہے۔ا س لئے پی پی پی کے سینیٹر نے یہ مطالبہ کیا کہ حکومت وہ تمام شرائط ایوان کے سامنے پیش کرے جن کے تحت پاکستان عرب ناٹو یا وسیع تر اسلامی ممالک کے فوجی اتحاد کا حصہ بن گیا ہے۔ 



جہانگیر ترین نااہل قرار

| وقتِ اشاعت :  


نواز شریف کے بعد تحریک انصاف کے سیکریٹری جنرل جہانگیر ترین کو سپریم کورٹ نے نااہل قرار دیا۔ وہ تا عمر نااہل قرار پائے ہیں یہ تحریک انصاف کے لئے ایک بری خبر ہے۔ خوشی کی بات یہ ہے کہ عمران خان کے حق میں فیصلہ آیا ان کے خلاف کوئی بھی الزام ثابت نہیں ہوا تاہم غیر ممالک سے پارٹی کے لئے فنڈ اور چندہ کا مقدمہ پاکستان الیکشن کمیشن کے پاس ہے اور اس کا فیصلہ کمیشن کرے گی۔ 



غیر یقینی سیاسی صورتحال

| وقتِ اشاعت :  


پارلیمان کے دونوں ایوانوں میں سیاسی مسائل پر بحث و مباحثہ جاری ہے۔ بعض اوقات سیاسی معاملات اور مسائل پر حکومت اور اپوزیشن کا یکساں موقف سامنے آتا ہے خصوصاً فیض آباد دھرنا اور اس سے متعلقہ مسائل پر اختلافات رائے کم سے کم نظر آتا ہے۔



متحدہ مجلس عمل کی بحالی

| وقتِ اشاعت :  


ملک کی پانچ اہم ترین مذہبی پارٹیوں نے متحدہ مجلس عمل کی دوبارہ بحالی کا فیصلہ کیا ہے۔ اگلے ایک ماہ کے دوران مذہبی جماعتیں جو اتحادی حکومتوں میں شامل ہیں، حکومتوں کو چھوڑدینگی۔ مولانا فضل الرحمان کو موجودہ حکومت نے کشمیر کمیٹی کا چیئرمین بنایا ہے اس کے علاوہ ان کو مرکزی وزیر کی بھی حیثیت حاصل ہے۔